57

پاک بھارت روایتی جنگ کے خطرے کا امکان ۔ وزیرِاعظم پاکستان

ویب ڈیسک

وزیراعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر کو بھارت میں شامل کرنے کے بھارتی حکومت کے اقدام کے بعد پاک بھارت روایتی جنگ کے خطرے کی طرف اشارہ دے دیا۔

پارلیمنٹ کے مشترکا اجلاس سے خطاب میں کہا کہ بھارت نسلی نظریات کا ملک ہے، جس نے تمام ملکی اور بین الاقوامی قوانین کو پامال کر دیا۔ تحریک آزادی کشمیر اب مزید شدت اختیار کر جائے گی، مقبوضہ کشمیر کے اندر سے پلواما جیسے حملے ہو سکتے ہیں جن کا الزام بھارت پاکستان پر دھرے گا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جو بھارت نے کیا وہ ہم مانیں گے نہیں، اب ہم تباہی کی طرف جا رہے ہیں، اگر دونوں ایٹمی طاقتوں کا ٹکراؤ ہوا تو اثرات پوری دنیا تک جائیں گے۔

وزیرِاعظم عمران خان نے کہا کہ ہمیں اس سیشن کی پوری طرح شاید سمجھ نہیں ہے،اس سیشن کو صرف پاکستانی قوم نہیں بلکہ کشمیری اور پوری دنیا بھی دیکھ رہی ہے، ایوان سے پیغام جانا چاہیے کہ ساری قوم متحد ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہماری حکومت کی پہلی ترجیح پاکستان سے غربت کا خاتمہ تھا، اس لیے ہم چاہتے تھے کہ پڑوسیوں سے بہتر تعلقات ہوں، تمام پڑوسیوں سے رابطہ کرنے کی کوشش کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں