63

ملک بھر میں جمعہ ’یوم یکجہتی کشمیر‘ کے نام سے منایا گیا۔

ویب ڈیسک

وزیر اعظم عمران خان کی اپیل پر ملک بھر کے عوام کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے آج دوپہر 12 سے ساڑھے 12 بجے تک گھروں سے نکلیں گے، ٹریفک اور ٹرینوں کو روک دیا جائے گا ، عمران خان وزیراعظم سیکریٹریٹ کے سامنے اجتماع کی قیادت کریں گے ۔

ملک بھر میں آج جمعہ کو یوم یکجہتی کشمیر کے طور پر منایا جارہا ہے ، ٹھیک دوپہر 12 بجے سائرن بجائے جائیں گے اور قومی ترانہ پڑھا جائے گا‎‏ اور اس کے بعد کشمیر کا ترانہ پڑھا جائے گا۔

سگنل آدھے گھنٹے تک ریڈ اور ٹریفک رکی رہے گی، قومی پرچم کے ساتھ کشمیر کا جھنڈا بھی لہرایا جائے گا، ملک بھر میں ریلیاں نکالی جائیں گی ، وفاقی وزراء، پی ٹی آئی اور سرکاری ملازمین ڈی چوک میں جمع ہوں گے جبکہ وزیر اعظم عمران خان شاہراہ دستور پر بھارتی جارحیت کے خلاف احتجاجی مظاہرے کی قیادت کریں گے۔

اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان نے عوام سے آدھے گھنٹے کیلئے باہر نکلنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم باہر نکل کر پیغام دیں گے کہ پوری پاکستانی قوم مقبوضہ کشمیر پر غیرقانونی قبضے کے خلاف کھڑی ہے، تمام پاکستانی سب کچھ چھوڑ چھاڑ کر آج 12 بجے سے لے کر 12:30 تک باہر نکلیں اور اہلِ کشمیر کیساتھ اظہار یکجہتی کریں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے بھی نوجوانوں بالخصوص طالب علموں پر زور دیا ہے کہ وہ اپنے کشمیری بھائیوں کیساتھ غیر متزلزل حمایت کے اظہار کیلئے ان پروگراموں میں شرکت یقینی بنائیں۔

نماز جمعہ کے بعد کشمیری عوام کیلئے خصوصی دعائیں مانگی جائیں گی، ملک بھر میں ریلیاں نکالی جائیں گی، تحریک انصاف ڈی چوک میں کشمیری بھائیوں کیساتھ یکجہتی کا اظہار کرے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پراپنے پیغام میں تمام پاکستانیوں سےآدھے گھنٹے کیلئے باہرنکلنے کی اپیل کرتےہوئے کہاہے کہ آج باہر نکل کر ہم کشمیری بھائیوں کو پیغام دیں گے کہ پوری پاکستانی قوم بھارتی سفاکیت، 24 روز سے جاری غیر انسانی کرفیو، بچوں، خواتین سمیت کشمیری باشندوں پر تشدد، ان کے قتل ، مودی سرکار کے نسل کشی کے ایجنڈے اور مقبوضہ کشمیر پر غیر قانونی قبضے کے خلاف کھڑی ہے،وزیراعظم نے کہاکہ کشمیر کی ڈیموگرافی تبدیل کرنے کا منصوبہ چوتھے جینیوا کنونشن کے تحت جنگی جرم ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں