86

آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع کا نوٹیفکیشن معطل۔

ویب ڈیسک

سپریم کورٹ آف پاکستان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت میں 3 سال کی توسیع کا نوٹیفکیشن معطل کر دیا۔

عدالتِ عظمیٰ نے آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع سے متعلق درخواست کو ازخود نوٹس میں تبدیل کر یا، چیف جسٹس آف پاکستان آصف سعید کھوسہ نے کیس کی سماعت کی۔

یہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کا پہلا ازخود نوٹس ہے۔

چیف جسٹس نے اپنے حکم میں کہا کہ درخواست کو 184(3) کے تحت ازخود نوٹس میں تبدیل کر رہے ہیں۔

 انہوں نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ وزیرِ اعظم کو آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع کا اختیار ہی نہیں ہے، صرف صدرِ مملکت ہی یہ توسیع کر سکتے ہیں۔

اٹارنی جنرل نے عدالتِ عظمیٰ کو بتایا کہ آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع صدر کی منظوری کے بعد کی گئی۔

سپریم کورٹ نے آرمی چیف کےخلاف درخواست واپس لینے کی درخواست مسترد کر دی۔

درخواست گزار ریاض حنیف راہی نے عدالت سے درخواست واپس لینے کی استدعا کی تھی۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہاتھ سے لکھی ہوئی درخواست کے ساتھ کوئی بیانِ حلفی بھی موجود نہیں جبکہ درخواست گزار اور ایڈووکیٹ ان ریکارڈ کمرۂ عدالت میں موجود نہیں، ہم واپس لینے کی درخواست کو نہیں سنیں گے۔

اٹارنی جنرل نے کہا کہ آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع کی کابینہ سے سمری کی منظوری بھی لی گئی تھی، پشاور ہائی کورٹ میں بھی اس طرح کی درخواست دائر ہوئی تھی جو واپس لے لی گئی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں