221

نادرا نے ’ب’ فارم جاری نہ کیا، بورڈ نے ایڈمٹ کارڈ روک دیا، یتیم طالبہ تعلیم کیسے جاری رکھے؟

ادرا نے ’ب’ فارم جاری نہ کیا، میٹرک بورڈ نے ایڈمٹ کارڈ روک دیا، یتیم طالبہ تعلیم کیسے جاری رکھے؟
سندھ ہائی کورٹ نے ماہم رحمان کی فریاد سن لی، 10 دن میں نادرا کو ’ب‘ فارم جاری کرنے کی ہدایت کردی۔
ماہم رحمان اپنی خالہ کے ساتھ رہتی ہے۔ تین ماہ کی عمر میں والد اور تین برس کی ہوئی تو والدہ کا سایہ بھی چھن گیا۔
یتیم طالبہ ماہم رحمان کی فریاد اب عدالت نے سن لی ہے۔  سندھ ہائیکورٹ میں یتیم بچی کو نادرا کی جانب سے ب فارم جاری نہ کرنے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی ۔
دوران سماعت درخواست گزار کے وکیل کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا کہ ماہم رحمان کو ب فارم اور ایڈمٹ کارڈ جاری کرنے کا حکم دیا جائے، نادرا نے والدین کے بغیر ب فارم جاری کرنے سے انکار کردیا ہے، بے سہارا بچی تعلیم جاری رکھنا چاہتی ہے۔
وکیل نے بتایا کہ ماہم تین ماہ کی تھی کہ والد اور تین برس کی تھی تو والدہ کا انتقال ہوگیا، بچی کا کوئی وارث نہیں مختلف رشتہ داروں کے گھر میں رہتی ہے، نادرا نے ب فارم جاری نہیں کیا اور اب میٹرک بورڈ نے ایڈمٹ کارڈ روک دیا۔
اس موقع پر وکیل بورڈ آفس نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ بچے کی شناخت کے لیے ’ب‘ فارم ضروری ہے۔
عدالت نے نادرا کو یتیم بچی کا ’ب‘ فارم جاری کرنے کا حکم دے دیا ہے

کیٹاگری میں : ادب

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں